عالمی سطح پر معاشی بحران شدت اختیار کرتا جارہا ہے اور دنیا بھر کی معیشتوں کو اپنی لپیٹ میں لے رہا ہے۔ عالمی معاشی بحران کے اثرات دنیا بھر کی سیاست پر بھی مرتب ہو رہے ہیں اور ہر جانب حکمران طبقہ ہیجان اور افرا تفری کی کیفیت میں نظر آتا ہے۔ پرانے اتحاد ٹوٹ رہے ہیں، سیاسی پارٹیاں ختم ہو رہی ہیں، ریاستیں کمزور ہو رہی ہیں اور معیشتیں تباہ ہورہی ہیں۔ درحقیقت

0
0
0
s2smodern

لیبیا خانہ جنگی میں ڈوبا ہوا ہے۔ جنرل ہفتار نے اقوام متحدہ کی منظور نظر قومی مفاہمتی حکومت (GNA) اور اس کے سربراہ صدر فیاض ال سیراج کا تختہ الٹنے کے لئے خونریز جنگ شروع کر رکھی ہے۔ حملے کا آغاز اسی دن کیا گیا جب 14 اپریل کو قومی مفاہمتی کانفرنس منعقد کروانے کے لئے اقوام متحدہ کا جنرل سیکرٹری انٹونیو گوٹیریز طرابلس کے دورے پر لیبیا پہنچا۔

0
0
0
s2smodern

سینڈرز سرمایہ داروں کی دو بڑی پارٹیوں میں سے ایک یعنی ڈیموکریٹک پارٹی کا صدارتی امیدوار بننے کے لیے سرگرداں ہے۔ تقریباً ہر مرتبہ ایسا ہی ہوتا ہے کہ ڈیموکریٹک پارٹی کے تمام امیدوار جو نامزدگی حاصل کرنے میں ناکام رہتے ہیں، وہ صدارتی انتخابات میں نامزد ہونے والے امیدوار کی حمایت کرتے ہیں

0
0
0
s2smodern

جب چین جاگے گا تو دنیا لرز اٹھے گی“۔ نپولین کی اس شہرۂ آفاق پیش گوئی کو تاریخ نے سچ ثابت کر دیا ہے۔ خاص طور پر پچھلے بیس سالوں میں چین ایک ایسی اہم معاشی قوت بن چکا ہے جو اس وقت امریکہ کی عالمی بالادستی کو کھلم کھلا چیلنج کر رہا ہے

0
0
0
s2smodern

’’سمندروں میں پانی کی سطح بلند ہو رہی ہے اور اور ہمارے صبر کا پیمانہ بھی‘‘۔ یہ عبارت لندن میں طلبہ کی جانب سے ماحولیاتی تبدیلیوں اور اس پر حکومتوں کی غیر فعالیت کے خلاف ہونے والی ہڑتال اور احتجاجی ریلی میں ایک پلے کارڈ پر درج تھی۔

0
0
0
s2smodern

’’جب لہریں تھم جاتی ہیں تو تب ہی پتہ چلتا ہے کہ کون کون ننگا تیر رہا تھا‘‘، یہ بات بہت عرصہ پہلے ایک ارب پتی وارن بفٹ نے کہی تھی۔ دوسرے لفظوں میں ایک خاص لمحے تک ہی چیزیں خوش کن دکھائی دیتی ہیں۔ جب حالات پلٹا کھاتے   ہیں تو سب افشا ہوجاتا ہے۔

یہ بات آج کی عالمی معیشت کی صورتحال کو واضح کرتی ہے۔ لہریں بیٹھ رہی ہیں

0
0
0
s2smodern

عالمی مارکسی رجحان(IMT)، امریکی سامراج کی جانب سے وینزویلا میں حالیہ کُو کی کوشش کو مسترد کرتا ہے۔ ہم دیکھ رہے ہیں کہ  امریکہ اور اس کے اتحادی ممالک ڈونلڈ ٹرمپ کی قیادت میں انتہائی دیدہ دلیری سے   وینزویلا میں صدر مادورو کی حکومت کو گرانے کے لیے کوشش کر رہے ہیں۔ یہ بولیوارین انقلاب پر پچھلے بیس سالوں میں ہونے والے حملوں کی ایک تازہ ترین قسط ہے

0
0
0
s2smodern

11 اپریل کو سوڈان کے سابق آمر عمر البشیر کا تین دہائیوں پرمحیط تختہ الٹنے کے بعد بھی سوڈانی انقلاب کا ریلا تھما نہیں ہے۔ اس کے برعکس، انقلاب کے بنیادی مطالبات پورے کرنے کے بجائے فوج عوامی فتح کو اپنے مذموم مقاصد کے لئے استعمال کرتے ہوئے اقتدار پر قبضہ کرنا چاہتی ہے تاکہ عوامی شعور کو پچھاڑا جا سکے۔ لیکن عوام جان توڑ محنت سے جیتی فتح کو اتنی آسانی سے اپنے ہاتھ سے جانے دینے کے لئے تیار نہیں

0
0
0
s2smodern

26 سال پہلے سوویت یونین کے انہدام کے بعد سرمایہ داری کے حامی خوشی سے پاگل ہوئے جا رہے تھے۔ وہ سوشلزم اور کمیونزم کی موت کی بات کرتے تھے۔ ان کے مطابق لبرل ازم کی جیت ہوچکی تھی اور تاریخی ارتقا نے سرمایہ داری کی صورت میں اپنا حتمی اظہار کر دیا تھا

0
0
0
s2smodern